پیر, اپریل 22, 2024
پاکستان

روس نے یوکرین پر حملہ کیا

روس کے صدر ولادیمیر پوتن نے جمعرات کو یوکرین میں فوجی آپریشن شروع کیا جس میں پورے ملک میں دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں اور اس کے وزیر خارجہ نے خبردار کیا کہ "بڑے پیمانے پر حملے” جاری ہیں۔ہفتوں کی شدید سفارت کاری اور روس پر مغربی پابندیوں کا نفاذ پوٹن کو روکنے میں ناکام رہا، جس نے یوکرین کی سرحدوں پر 150,000 اور 200,000 کے درمیان فوجیوں کو جمع کیا تھا۔

"میں نے فوجی آپریشن کا فیصلہ کیا ہے،” پوتن نے ایک حیرت انگیز ٹیلی ویژن اعلان میں کہا جس نے امریکی صدر جو بائیڈن اور دیگر مغربی رہنماؤں کی جانب سے فوری مذمت کی اور عالمی مالیاتی منڈیوں کو افراتفری میں ڈال دیا۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے نامہ نگار کے مطابق اس اعلان کے فوراً بعد یوکرین کے دارالحکومت کیف اور کئی دوسرے شہروں میں دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔

یوکرین کے سرحدی محافظوں نے روسی اور بیلاروسی سرحدوں پر حملے کی اطلاع دی۔

یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے مارشل لاء کا اعلان کیا اور کہا کہ روس ان کے ملک کے "فوجی انفراسٹرکچر” پر حملہ کر رہا ہے، لیکن شہریوں سے گھبرانے کی اپیل کی اور فتح کا عزم کیا۔